R Strategy - Forex Trading Method - Reversal Continuation Signals

67۔ آر سٹریٹجی

0 0 Vote
Instructor

67۔ آر سٹریٹجی

فاریکس تربیتی پروگرام کی سڑسٹھویں نشست

فاریکس تربیتی نشست بحوالہ مالیاتی مارکیٹس میں پھر سے خوش آمدید۔ اس نشست میں آر سٹریٹیجی یا حکمت عملی کا تفصیلی جائزہ لیا جائے گا۔

آر سٹریٹجی

آر سٹریٹجی اپنی سادہ ساخت اور طریقہ کار کے باوجود قابل اعتماد اور طاقت ور سگنلز پیدا کرتی ہے۔ تاجر رجحان کی سمت اور اہم مداروں کو شناخت کر سکتا ہے جو کہ آر سٹریٹجی کے ذڑیعے رجحان کے کنارے پر وجود میں آتے ہیں۔ تاجر سہولت کے ساتھ طاقت ور اور نمایاں معاونتی اور مزاحمتی لائنوں کو استعمال میں لا سکتا ہے۔

دورانیہ ہائے وقت

تاجر تمام دورانیہ ہائے وقت کے حوالے آر سٹریٹجی سے استفادہ کر سکتا ہے تاہم ایچ 1 اور طویل تر دورانیہ ہائے وقت سے سب سے زیادہ قابل اعتماد سگنلز کو کشید کیا جا سکتا ہے۔

سمبلز

آر سٹریٹیجی کا اطلاق تمام سمبلز فاریکس کموڈوٹیز اور سٹاکس پر کیا جاتا ہے۔

R Strategy - Powerful Support and Resistance Levels, Trends and Lines

اعزازی یا کمپلیمنٹری ٹولز

تاجر آر سٹریٹجی کو آر ایس آئی کینڈل سٹکس ڈائورجنس ہڈن ڈائورجنس اور فائبونیکی پیٹرنز کے ساتھ باہم ملا سکتا ہے۔

قابل ذکر اطلاعات

تاجر کو مندرجہ ذیل زاویوں کو مدنظر رکھنا ہوتا ہے۔

1۔ مارکیٹ پرائس کو معاونتی لائن کو کم از کم دو بارچھونا ہوتا ہے۔ معاونتی لائن مع 4 سے زائد ضربات ایک مثالی معاونتی لائن تصور کی جاتی ہے۔

R Strategy - Commodity, Stocks, Forex, CFDs and Financial Markets - Timeframes H1, H4

2۔ ایک مناسب معاونتی لائن کا زاویہ 15 ڈگری سے بڑا ہوتا ہے جب کہ یہ ایک مثالی معاملہ ہو گا کہ اگر یہ زاویہ 25 ڈگری سے متجاوز ہو۔

3۔ مناسب دورانیہ ہائے وقت ایچ 4 اور طویل تر سپین ہے۔

4۔ اگر مارکیٹ پرائس مزاحمتی لائن کی طرف قابل ذکر انداز میں پلٹ آتی ہے بعد اس کے کہ یہ موجود مزاحتمی لائن کو کراس کر چکی ہو تو آر سٹریٹیجی غیر موثر ہو جائے گی۔

R Strategy - Analysis of Trading Pattern and Method on Support or Resistance Lines

فروختی سگنل

جب قیمت مزاحمتی لائن کے اوپر پوری کینڈلز کے ساتھ اوپری طرف سے مزاحمتی لائن کو کراس کرتی ہے اور پھرموجود مزاحمتی لائن کی طرف پلٹ آتی ہے۔ اگر پرائس یا قیمت نیچے کی سے مزاحمتی لائن کو کراس کرتی ہے اور اس لائن کے نیچے کینڈل کی کلوز پرائس وجود میں آ جاتی ہے تو فروختی سگنل پیدا ہوں گے بعد اس کے کہ پرائس اس کینڈل کی نچلی پرائس سے بھی نیچے چلی جائے گی۔

تین حصول منافع قیمتیں درج ذیل طریقے سے کشید کی جا سکتی ہیں

1۔ بیئرش کینڈل کی طوالت جو کہ مزاحمتی لائن کے نیچے وجود میں آتی ہے ایکس 1 کے برابر ہوتی ہے پس پہلی ٹی پی پرائس انٹری پرائس سے ایکس 1 پپس کم ہو سکتی ہے۔

R Strategy -Entry, Buy or Sell Prices - High or Low Prices of Candlestick Patterns

2۔ موجود کینڈل کی کم قیمت اور آخری چوٹی کی زیادہ قیمت کے مابین فاصلہ ایکس 2 کے برابر ہوتا ہے پس تاجر ٹی پی پرائس کو انٹری پرائس سے ایکس 2 پپس کم تصور کر سکتا ہے۔

3۔ اگر اس ریجن میں طاقت ور پیٹرن وجود میں آتا ہے تو تاجر اس پیٹرن یا نمونے کے ذریعے تیسری ٹی پی پرائس کو پیش نظر رکھ سکتا ہے۔

ایس ایل پرائس کو ٹی پی پرائس کو پیش نظر رکھ کر متعین کیا جا سکتا ہے جس کا انتخاب تاجر کرتا ہے۔

گراف پر جب کہ مارکیٹ پرائس 4 مرتبہ مزاحمتی لائن کو ضرب لگاتی ہے تو یہ اوپری طرف سے موجود لائن کو کراس کر لیتی ہے اور پھر نیچے کی طرف پلٹ آتی ہے۔ چونکہ کینڈل موجود مزاحمتی لائن سے نیچے وجود میں آئی اس لیے تاجر فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا۔ ٹی پی قیمتوں کا تعین بیئرش کینڈل کی طوالت سے کیا جا سکتا تھا۔ اس کینڈل کی کم قیمت اور آخری چوٹی پر موجود کینڈل کی زیادہ قیمت کے مابین فاصلے کی بات کی جائے اور اس ایریا میں فلیگ پیٹرن کی بات کی جائے جو کہ کم دورانیہ وقت میں شناخت کیا جا سکتا تھا۔ ایس ایل پرائس منتخب کردہ ٹی پی پرائس کی بنیاد پر بدلتی جا رہی تھی۔

R Strategy - Bullish and Bearish Candlestick - Dark Cloud or Engulfing

اہم اطلاعات

1۔ جب قیمت کسی بھی شے کو چھوئے یا کراس کیے بغیر مزاحمتی لائن کی طرف بڑھتی ہے۔ اگر مزاحمتی لائن کے قریب طاقت ور بیئرش کینڈل وجود میں آتی ہے تو پھر قیمت کے بیئرش کینڈل سے نیچے جانے کے بعد طاقت ور اور قابل اعتماد فروختی سگنل پیدا ہوتا ہے۔ بائیں گراف پر قیمت یا پرائس گریڈینٹ مزاحمتی لائن کراس نہ کر سکی اور جب یہ اس لائن کے قریب پہنچی تو ایک ڈارک کلاؤڈ/انگلفنگ کینڈل وجود میں آتی ہے۔ پس تاجر موجود کینڈل سے نیچے کی قیمت پر ایک فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا۔

2۔ جب قیمت مزاحمتی لائن کو پار کرتی ہے اور اس کی طرف پلٹ آتی ہےاور اگر ایک طاقت ور بلش کینڈل مزاحمتی لائن پر وجود میں آتی ہے تو پھر ایک قابل اعتماد خریداری سگنل پیدا ہو گا۔ دائیں گراف پر مارکیٹ پرائس مزاحمتی لائن کو پار کر چکی ہوتی ہے۔ مارکیٹ پرائس سب سے نچلی طرف سے اس لائن کو پار نہیں کر سکتی تھی بعد اس کے کہ قیمت اس کی طرف پلٹ آتی ایک پیئرسنگ لائن/اینگلفنگ کینڈل اس مزاحمتی لائن پر وجود میں آتی ہے پس تاجر خریداری آرڈر رکھوا سکتا تھا۔ جب قیمت سب سے نچلی طرف سے مزاحمتی لائن کو پا کر لے تو تاجر بیئرش کینڈل سے نیچے فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا۔

خریداری سگنل

جب قیمت مزاحتمی لائن سے اوپر پوری کینڈلز کے ساتھ سب سے نچلی طرف سے مزاحتمی لائن کو پار کرتی ہے اور موجود مزاحتمی لائن کی طرف پلٹ آتی ہے۔ اگر قیمت سب سے اوپری طرف سے مزاحمتی لائن کو کراس کرتی ہے اور کینڈل کی پرائس اس لائن کے اوپر وجود میں آتی ہے تو پرائس کے اس کینڈل کی زیادہ قیمت سے زیادہ ہونے پر ایک خریداری سگنل پیدا ہو گا۔

R Strategy - High or Low Prices - Take Profit and Stop Loss Prices on Buy or Sell

تین حصول منافع قیمتوں کو اس ذیل میں کشید کیا جا سکتا ہے

1۔ بلش کینڈل کی لمبائی جو کہ مزاحتمی لائن کے اوپر وجود میں آتی ہے وہ ایکس 1 کے برابر ہوتی ہے پس پہلی ٹی پی پرائس انٹری پرائس سے ایکس 1 پپس زیادہ ہوتی ہے۔

2۔ موجود کینڈل کی زیادہ پرائس اور آخری ویلی میں موجود کینڈل کی کم قیمت میں فاصلہ ایکس 2 کے برابر ہوتا ہے پس تاجر ٹی پی پرائس کو انٹری پرائس کے مقابلے میں ایکس 2 پپس زیادہ تصور کر سکتا ہے۔

3۔ اگر اس ریجن میں ایک طاقت ور پیٹرن وجود میں آتا ہے۔ تاجر اس پیٹرن کے ذریعے تیسری ٹی پی پرائس کو مدنظر رکھ سکتا ہے۔

ایس ایل پرائس کا تعین تاجر کی طرف سے منتخب کردہ ٹی پی پرائس کے تناظر میں کیا جا سکتا ہے۔

R Strategy - Valley or Peak on Reversal Spot of Market Price Trend

گراف پر جب مارکیٹ پرائس مزاحمتی لائن کو 5 مرتبہ چھو چکی ہوتی ہے تو یہ سب سے نچلی طرف سے موجود لائن کو پار کرتی ہے، پھر یہ سب سے اوپری طرف پلٹ جاتی ہے۔ جیسے ہی کینڈل مزاحمتی لائن کے اوپر وجود میں آتی ہے تو تاجر خریداری آرڈر رکھوا سکتا ہے۔ ٹی پی قیمتوں کا بلش کینڈل کی لمبائی سے تعین کیا جا سکتا ہے۔ اس کے علاوہ اس کینڈل کی زائد قیمت اور آخری ویلی پر کینڈل کی کم قیمت کے مابین فاصلہ بھی اہم عنصر ہے۔ تاہم اس ریجن کے حوالے سے کوئی مستند پیٹرن موجود نہ تھا۔ ایس ایل پرائس منتخب کردہ ٹی پی پرائس کے حوالے سے تنوع کا شکار رہی۔

اہم اطلاعات

1۔ جب قیمت کسی بھی شے کو پار کیےبیغر مزاحمتی لائن کی طرف گراوٹ کا شکار ہوتی ہے، اگر مزاحتمی لائن کے قریب ایک طاقت ور بلش کینڈل وجود میں آتی ہے تو ایک طاقت ور اور قابل اعتماد خریداری سگنل پیدا ہوتا ہے بعد اس کے کہ قیمت بلش کینڈل سے اوپر چلی جاتی ہے۔ بائیں گراف پر قیمت کافی عرصہ کے لیے ڈیسنڈینٹ مزاحمتی لائن کو کراس نہ کر سکی اور جب یہ اس لائن کے قریب گراوٹ کا شکار ہوتی ہے تو ایک ہیمر کینڈل وجود میں آتی ہے پس تاجر موجود کینڈل کے زائد قیمت کے اوپر خریداری آرڈر رکھوا سکتا تھا۔

R Strategy - Bullish and Bearish Hammer Candlestick Patterns on Uptrend or Downtrend

2۔ جب قیمت مزاحمتی لائن کو پار کر لیتی ہے اور اس کی طرف واپس بڑھتی ہے تو اگر مزاحمتی لائن پر ایک طاقت ور بیئرش کینڈل وجود میں آتی ہے تو ایک قابل اعتماد سگنل پیدا ہو گا۔ دائیں گراف پر مارکیٹ پرائس مزاحتی لائن کو پار کر چکی ہوتی ہے۔ مارکیٹ پرائس اوپری طرف سے اس لائن کو پار نہیں کر سکی بعد اس کے کہ قیمت اس کی طرف پلٹ آئی تھی۔ اس مزاحتمی لائن پر ایک اینگلفنگ کینڈل وجود میں آ چکی ہے۔ پس تاجر فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا۔

جی بی پی یو ایس ڈی چارٹ جو کہ روزانہ کے دورانیہ وقت کے حساب سے ہوتا ہے۔ تاجر اوپر جاتے رجحان کے حوالے سے آر سٹریٹجی یا حکمت عملی کی شناخت کر سکتا ہے۔ جب مارکیٹ پرائس مزاحتی لائن کو 3 مرتبہ چھو چکی ہوتی ہے۔ بالآخر یہ اسے سب سے اوپری طرف سے کراس کرتی ہے پھر مارکیٹ پرائس سب سے نچلی طرف سے پلٹتی ہے اور مزاحتمی لائن سے نیچے ایک بیئرش کینڈل وجود میں آتی ہے۔ تاجر اس کینڈل کے نیچے فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا۔ یہ حکمت عملی رجحان کے سب سے آخری میں مدار پوائنٹ کو کامیابی سے شناخت کرتا ہے۔

نیچے جاتے رجحان کے حوالے سے ایک اور مثال میں مارکیٹ پرائس نے طاقت ور مزاحمتی لائن کو چھوا ہے۔ تاہم اس مزاحمتی لائن کو کراس یا پار نہیں کیا جا سکا۔ مزاحتمی لائن کے قریب ایک مخصوص مقام پر ایسا ہوا کہ ایک طاقت ور اینگلفنگ/پیئرسنگ لائن وجود میں آئی ہے۔ پس تاجر موجود کینڈل کے اوپر ایک خریداری آرڈر رکھوا سکتا تھا۔ اس حکمت عملی کی مدد سے کئی سگنلز پیدا کیے جاتے ہیں۔

r strategy Financial strategy daily chart with divergance and convergance - Reversal or Continuation Signals

ایسی ہی ایک مثال کو سامنے رکھا جائے تو مارکیٹ پرائس سے 4 ضربیں لگنے کے بعد مزاحتمی لائن سب سے نچلی طرف سے بالآخر ٹوٹ گئی تھی۔ مزاحمتی لائن کے اوپر ایک بلش اینگلفنگ کینڈل بند ہوئی ہے۔ پس تاجر اس کینڈل کے اوپر خریداری آرڈر رکھوا سکتا تھا جب کہ ٹی پی پرائس انٹری پرائس سے 65 پپس زیادہ ہو۔ ایک طاقت ور لیول بھی یہاں موجود تھا۔

اوپر جاتے رجحان کے حوالے سے اس حکمت عملی سے متعلقہ ایک اور مثال کچھ یوں ہے۔ مارکیٹ پرائس نے 4 مرتبہ اوپر جاتے رجحان کو چھوا ہے۔ بالآخرمارکیٹ کا رجحان موجود مزاحمتی لائن کو پار کر لیتا ہے اور اس کے بعد نیچے جاتا رجحان سامنے آتا ہے۔ جب بیئرش کینڈل مزاحمتی لائن سے نیچے وجود میں آ جاتی ہے تو تاجر اس کینڈل کے نیچے انٹری پرائس کے ساتھ فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا۔ ٹی پی پرائس انٹری پرائس سے 63 تا 84 پپس نیچے ہو سکتی تھی۔

ایک اور مثال جس میں مارکیٹ پرائس 4 مرتبہ مزاحتمی لائن کو ضربات لگا چکی تھی اور بریک آؤٹ کے بعد یہ پھر سے سب سے نچلی طرف پلٹ آئی۔ اس بیئرش کینڈل کے بعد تاجر فروختی آرڈر انٹری پرائس کی بہ نسبت 85 پپس ٹی پی پرائس نیچے رکھوا سکتا تھا۔ نیچے جاتے رجحان کے حوالے سے مارکیٹ پرائس 4 ناکام کوششوں کے بعد سب سے نچلی طرف سے مزاحتمی لائن کو پار کر سکتی تھی۔ جب مارکیٹ پرائس مزاحتمی لائن کو پار کر چکی ہوتی تھی تو تاجر بلش کینڈل کے اوپر خریداری آرڈر رکھوا سکتا تھا۔ اس حکمت عملی کے ساتھ ساتھ خصوصی کینڈل پیٹرن بھی وجود میں آ چکا ہوتا ہے۔ ٹی پی پرائس انٹری پرائس سے 97 تا 155 پپس اوپر ہو سکتی تھی۔ مارکیٹ پرائس انٹری پرائس سے 220 پپس زیادہ ہو سکتی تھی۔

R Strategy - Pips and Pippet from Entry Price of a Trading Signals on MT4 Trading Platform

ایک اور مثال بحوالہ آر سٹریٹجی یہ ہے کہ تاجر انٹری پرائس کی بہ نسبت ٹی پی پرائس کی قیمت 63 پپس کم رکھ کر فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا۔ تاجر ہر سمبل کے حوالے سے یہ مفید حکمت عملی اپنا سکتا ہے۔ مثلاً روزانہ چارٹ پر اوپر جاتے رجحان کے حوالے سے دیکھا جا سکتا ہے کہ قیمت نے 4 مرتبہ مزاحمتی لائن کو چھوا قبل اس کے کہ یہ سب سے اوپری سمت سے اس لائن کو کراس کر جائے۔ جب قیمت مزاحمتی لائن کے نیچے گر جاتی ہے تو تاجر انٹری پرائس کی بہ نسبت ٹی پی پرائس کی قیمت 308 پپس کم رکھ کر اور بیئرش اینگلفنگ کینڈل سے گھٹآ کر فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا۔ ایک اور آر سٹریٹجی ظاہر کرتی ہے کہ پچھلے فروختی آرڈر کی ٹی پی پرائس طویل ہو سکتی تھی یعنی کہ انٹری پرائس سے 650 پپس کم ہو سکتی تھی۔ مارکیٹ پرائس اس فرضی ٹی پی پرائس تک پہنچ گئی۔ مزید یہ کہ کہ دو آر سٹریٹجیز بھی ایک دوسرے کے ساتھ ساتھ چلتی ہوں۔ تاجر طویل مزاحتمی لائن کے اوپربھی خریداری آرڈر کو رکھوا سکتا تھا۔ جب بلش ایگلفنگ کینڈل وجود میں آتا ہے تو پچھلے فروختی آرڈر کی پہلی ٹی پی پرائس انٹری پرائس سے 308 پپس کم ہو سکتی تھی اور دوسری آر سٹریٹجی کو پیش نظر رکھتے ہوئے دوسری ٹی پی پرائس انٹری پرائس کی بہ نسبت 650 پپس کم ہو سکتی تھی۔

R Strategy -Bullish and Bearish Engulfing Candlesticks Confirmations - Upward and Downward Trends

یہ حکمت عملی تمام دورانیہ ہائے وقت پر منطبق ہوتی ہے۔ گولڈ چارٹ پر تاجر آر سٹریٹجی ڈرا کر سکتا تھا جو کہ اس اینگلفنگ کینڈل سے نیچے فروختی آرڈر کو پیدا کرنے کا باعث تھی۔ ٹی پی پرائس انٹری پرائس کی بہ نسبت 394 پپس کم ہو سکتی تھی۔ قیمتیں 390 پپس گھٹ کر تقریباً 1171$ تک پہنچ گئیں۔ یہ فروختی سگنل بعض ایسے تاجروں کے مفروضے کے باعث پیدا ہوا تھا کہ جن کا یہ اندازہ تھا کہ قیمت کے 1900$ تک پہنچنے کے بعد گولڈ اوپر کی طرف جائے گا۔

تاجر کو کئی مرتبہ یہ مشق کرنا ہوتی ہے تاکہ وہ مناسب اور قابل اعتماد حکمت عملی کی سمجھ بوجھ پیدا کرنے کی اہلیت میں اضافہ کر سکیں جو کہ پلٹاؤ اور جاری پوائنٹس کو شناخت کر پاتی ہے۔

اس کے ساتھ ہی یہ نشست اختتام کو پہنچی۔ اگلی نشست کے ساتھ پھر حاضر ہوں گے، اپنا خیال رکھیے گا۔

Comments

Copyright © 2011-2020 PFOREX.COM | Professional Forex School | Cashback and Rebates