Gold Trend Analysis Applying Price Action - Forex Trading Signals

51۔ تجزیہ برائے گولڈ رجحان بذریعہ اطلاق پرائس ایکشن

0 0 Vote
Instructor

51۔ تجزیہ برائے گولڈ رجحان بذریعہ اطلاق پرائس ایکشن

فاریکس تربیتی پروگرام کی اکیاونویں نشست

فاریکس تربیتی نشست بحوالہ مالیاتی مارکیٹس میں پھر سے خوش آمدید۔ اس نشست میں ہم پرائس ایکشن کی بنیاد پر گولڈ ٹرینڈ کے تجزیے کو زیر بحث لائیں گے۔

تجزیہ برائے گولڈ رجحان بذریعہ اطلاق پرائس ایکشن

تاجر ماہانہ دورانیہ وقت میں ایک دوسرے کے ساتھ گولڈ کے 3 چارٹس رکھوا سکتا ہے۔ پہلے چارٹ پر تاجر مارکیٹ پرائس کے ساتھ موونگ ایوریج کا انسلاک کر سکتا ہے۔ دوسرے چارٹ پر دوسرے ٹیمپلیٹ کا اطلاق کیا جا سکتا ہے تاکہ اینڈریوز پچ فورک کے پیٹرنز کو شناخت کیا جا سکے۔ تیسرے چارٹ پر تیسرے ٹیمپلیٹ کو استعمال کیا جاتا ہے جس میں انڈیکیٹرز جیسا کہ آر ایس آئی سی سی آئی اور اے او شامل ہوتے ہیں۔ پہلے چارٹ پر معاونتی اور مزاحمتی لائنوں کو شامل کیا جا سکتا ہے۔ ایک معاونتی لائن اس رجحان میں شامل کی جا سکتی ہے۔ پتلی لائن فائدہ بخش ہو گی جب تاجر چارٹ پر کئی لائنوں کو شامل کرنا چاہے گا۔ یہ معاونتی لائن ماہانہ دورانیہ وقت کے حساب سے کھینچی جائے گی۔ پس اس کے نمایاں اثرات رجحان کی نقل و حرکت پر مرتب ہوں گے۔ اس تیز ڈھلوان کے باعث کوئی اور معاونتی لائن موجود نہیں ہو گی۔ نیچے جاتے سلوپ یا ڈھلوان پر ایک مزاحمتی لائن رکھوائی جا سکتی ہے۔ تاجر کو چارٹ پر کوئی اور ٹریویل پیٹرن نہیں رکھوانے چاہئیں۔ اس بات کی سفاریش کی جاتی ہے کہ تاجر چارٹ پر موجود ہر رکھوائی گئی لائن کے حوالے سے وضاحت شامل کریں تاکہ وہ مخصوص لائنوں کے کھینچنے کے مقصداور لائن انفارمیشن سے متعلق جان پائیں۔ مثلاً ایس ایم ڈیسکرپشن یا وضاحتی خانے میں لکھا جا سکتا ہے جسے "سپورٹ/منتھلی" سے کشید کیا گیا ہے۔ مزاحمتی لائن کے حوالے سے وضاحتی خانے میں آر ایم کو درج کیا جا سکتا ہے۔ جب کبھی ماؤس ہر لائن کے اوپر پھیرا جاتا ہے وضاحت یا ڈیسکرپشن ظاہر ہو جاتی ہے۔ ایک اور لائن بھی ہے جو کہ منتخب کردہ دورانیہ وقت کی بنیاد پر معاونتی/مزاحمتی رویے کو ظاہر کرتی ہے جو کہ کہ اس دورانیہ وقت کے تناظر میں آر ایم کی وضاحت کر سکتی ہے۔ اگلے مرحلے کے لیولز جو کہ مارکیٹ کے رجحان پر اہم اثرات مرتب کرتے ہیں ان کو جانا جا سکتا ہے۔ اس لیول پر رجحان چار مرتبہ اس لیول کے حوالے سے ردعمل ظاہر کرتا ہے۔ مارکیٹ پرائس کے حوالے سے سب سے حالیہ ردعمل کے اپنے سے پہلے کے ردعمل کے مقابلے میں زیادہ اثرات مرتب ہوا کرتے ہیں۔ وضاحتی خانے میں تاجر "ایل ایم" کو داخل کر سکتے ہیں۔ تاجر کی بورڈ پر کنٹرول بٹن کو مسلسل دبانے کے دوران لیول پر ڈبل کلک کر کے لیول کو ڈپلیکیٹ کر سکتے ہیں۔ ڈپلیکیٹڈ لیول کو قیمت کے ایک اور اتار چڑھاؤ کے حوالے سے ری لوکیٹ کیا جا سکتا ہے۔ اگلا لیول اور اگلا لیول تاہم یہ بہتر ہے کہ ان لیولز کو کھیھنچا جائے جو کہ تازہ ترین مارکیٹ پرائس سے قریب ہوں۔ اس لیول پر اوسیلیشن کی تعداد اہمیت رکھتی ہے۔ پرائس یا قیمت اس لیول پر پانچ مرتبہ پہنچ چکی ہے۔ رجحان نے اس لائن کے حوالے سے چار مرتبہ ردعمل ظاہر کیا۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Support and Resistance Levels - Bullish and Bearish Trend

اگلے مرحلے پر تاجر سب سے زیادہ نمایاں پیٹرنز جیسا کہ فائبونیکی کھینچ سکتا ہے۔ اس پیٹرن کے انسلاک کے بعد تاجر نظرانداز کردہ لیولز کو ہٹا سکتا ہے۔ اس ریجن پر ایک پیننٹ پیٹرن وجود میں آ جاتا ہے جو کہ لیول ایچ پر ٹی پی پرائس کو ظاہر کرتا ہے۔ پس اس پیٹرن نے درست یا مستند خریداری سگنل کو ظاہر کیا۔ فائبونیکی پیٹرن کو ری لوکیٹ کر کے ایک اور پیٹرن تلاش کیا جا سکتا ہے جس کا خریداری سگنل درست ہو۔ اوپر جاتے رجحان کے حوالے سے کوئی اور بلش پیٹرن موجود نہیں۔ اس لیے فائبونیکی میں تبدیلی کی جا سکتی ہے تاکہ سمجھا جا سکے کہ آیا کوئی ریورسل پوائنٹ موجود ہے۔ ریجن کو باکس رکھوا کر 61.8٪ پر اس کی نشان دہی کی جا سکتی ہے۔ تاجر 61.8 ایف ایم داخل کر سکتا ہے جس میں ایف سے مراد فلیگ بمتعلق فائبونیکی پیٹرن ہے۔ ایم سے مراد منتھلی یا ماہانہ ٹائم فریم یا دورانیہ وقت ہے۔ اگر پرائس اس باکس میں وجود میں آتی ہے تو فائبونیکی کا فلیگ ناکام ہو جاتا ہے اور بلش ٹرینڈ یا رجحان کسی مخصوص دورانیہ وقت کے لیے کمزور پڑ جاتا ہے۔ اس ریجن پر ایک پاورفل لیول دیکھنے کو ملتا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ مضبوط معاونتی لائن بھی دکھائی دیتی ہے۔ پس 1172 کی پرائس کے قریب ایریا کے مارکیٹ کے رجحان پر کافی گہرے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ ماہانہ لیول کے ساتھ ساتھ ایک اور ریجن بھی ہوتا ہے جو کہ لیول 76.4٪ پر ہوتا ہے جو کہ ماہانہ سوئنگ یا فلیگ سے متعلقہ ہے۔ فائبونیکی لیول کے ساتھ ایک اور اہم لیول بھی موجود ہوتا ہے۔ پرائس لیول 50٪ کو پار کر چکی ہوتی ہے پس بقیہ لیولز کا مکمل گہرائی سے جائزہ لینا چاہیے۔ تاجر بڑے رجحان کے حوالے سے ایک اور فائبونیکی پیٹرن رکھوا سکتا ہے۔ وہ ریجن کہ جن کی تصدیق زیادہ ہوتی ہے ان کو مکمل توجہ کی ضرورت ہو گی۔ مثال کے طور پر بڑے فابونیکی کا 38.2٪ لیول مختصر فائبونیکی کے 50٪ پر اسے اوورلیپ کر دیتا ہے۔ پس یہ لیول وہ اہم ریجن ہوتا ہے کہ جس کے حوالے سے تاجروں کو کافی احتیاط سے غور و خوض کرنا پڑتا ہے۔ سب سے زیادہ حالیہ رجحان پر پیٹرنز کو کھینچنا پچھلے رجحانات کی بہ نسبت زیادہ مفید رہتا ہے۔ موونگ ایوریج ویلیوز 50100 اور 200 ہوتی ہیں۔ پرائس اوپری طرف سے مکمل طور پر لائن 50 کو پار نہیں کر سکتی۔ اور اگلے ریجن پر فائبونیکی لیول 61.8٪ ہوتا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ ایک طاقت ور لیول اور موونگ ایوریج لائن 100 موجود ہوتا ہے۔ اگلا پریزیمپٹؤ لیول موونگ ایوریج لائن 200 مع ایک اور طاقت ور لیول اور فائبونیکی پیٹرن کا 76.4٪ رکھتا ہے۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Gold Chart, Levels and Trendlines, Patterns, Candlesticks

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Fibonacci Expansion and Retracement Levels

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Overlapped Levels and Trendlines - Moving Average Indicator

اب ایک نیچے جاتے رجحان کا جائزہ لیا جا سکتا ہے جس میںفائبونیکی پیترن کو بیئرش فارمیٹ میں ری لوکیٹ کیا جا سکتا ہے۔ فائبونیکی کے 0٪ لیول پر ایک ڈبل ٹاپ مع نیک لائن موجود ہوتاہے۔ رجحان ایچ/2 کی طرف گراوٹ کا شکار ہو جاتا ہے جب کہ وہ بریک آؤٹ پوائنٹ کو کراس کر چکا ہو۔ یہ فرض کیا جاتا ہے کہ پرائس مستقبل میں ایچ کو چھوئے گی۔ پس ایک اور تصدیق پہلے باکس کے وضاحتی خانے میں ملاحظہ کی جا سکتی ہے۔ ایچ ہائیٹ کو ظاہر کرتا ہے جب کہ ڈی ٹی سے مراد ڈبل ٹاپ ہوتا ہے۔ یہ ریجن زیادہ طاقت ور ہو جاتا ہے۔ اس رجحان پر ایک اور پیٹرن پیننٹ ہوتا ہے۔ یہ بہتر ہو گا کہ فائبونیکی کے 61.8٪ پر باکس رکھوایا جائے جو کہ مارکیٹ کے رجحان پر گہرے اثرات مرتب کرے گا۔ جب کبھی قیمت اس لیول کی طرف بڑھے گی تو "61.8 ایف ایم" اور "ایل ایم" وضاحتی خانے میں درج کیے جا سکتے ہیں۔ ایف سے مراد فائبونیکی فلیگ اور ایل سے مراد لیول ہے۔ پرائس فائبونیکی کے 38.2٪ کو پار نہ کر سکی۔ اگر قیمت 38.2٪ لیول پار کیے بغیر 0٪ لیول کی طرف پلٹ آتی ہے تو پرائس ایچ/2 لیول پر پہنچ جائے گی۔ پیننٹ پیٹرن کی بریک آؤٹ لائن ویلیز پر کھینچی جا سکتی ہے۔ تاہم اس کے 6 مدار پوائنٹس ہوتے ہیں اس لیے مزید اتار چڑھاؤ بھی ہو گا۔ اگر لائن 1181 پار کر لی جاتی ہے تو قیمت ایچ/2 کی طرف گراوٹ کا شکار ہو جائے گی۔ اگر قیمت فائبونیکی کے 61.8٪ کی طرف بڑھ جاتی ہے تو یہ نچلی طرف پلٹ جائے گی یہاں تک کہ لیول ایم کی قیمت 1018 ہو جائے۔ ٹی پی پرائس ایچ/2 فائبونیکی پر رکھوائی جا سکتی ہے پس تاجر "ایچ/ 2 پی ایم" داخل کر سکتا ہے۔ پی سے مراد پیننٹ پیٹرن ہے۔ شاید گولڈ اس پرائس یا قیمت تک نہیں پہنچ سکتا۔ پھر بھی چارٹ ہمیں یہ دکھاتا ہے کہ 1018 تکنیکی تجزیے کے ذریعے حاصل کیا جا سکتا ہے۔ جیسا کہ آئل پرائس جو کہ 32 تک پہنچتا ہے بعد اس کے کہ یہ 147 کو چھو جائے۔ گولڈ پرائس اس ویلیو تک بھی کم ہو سکتی ہے۔ جو پیٹرنز یا لیولز اس لیول سے دور ہوتے ہیں انہیں نظرانداز کیا جا سکتا ہے۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Downtrend and Uptrend on Forex Trading Platform MetaTrader

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Fibonacci Levels, Pennant Pattern - Rectangle Properties

فائبونیکی پیٹرن کے ذریعے ایک اور نیچے جاتے رجحان کی پڑتال کی جا سکتی ہے کہ جس میں ٹرائی اینگل پیٹرون وجود میں آتا ہے۔ اگر فائبونیکی کے 0٪ کواس بیئرش ٹرائی اینگل کے بریک آؤٹ لائن کے طور پرتصور کیا جائے تو ٹی پی حالیہ فائبونیکی کے لیول ایچ/2 پر ہو گی یا لیول ایچ پر جو کہ اہم ریجن کے قریب ہے۔ تاجر واضاحتی خانے میں "ایچ ٹی ایم" کو شامل کر سکتا ہے جس میں ٹی سے مراد ٹرائی اینگل پیٹرن ہے۔ قریبی نمایاں پوائنٹس کو ایک پوائنٹ تصور کیا جا سکتا ہے۔ تمام اہم پیٹرنز لیولز اور پوائنٹس کا جائزہ لیا جاتا ہے۔ ڈبل باٹم اس ریجن میں وجود میں آتے ہیں۔ پس لیول ایچ/2 اہم ریجن کے باکس کو اوور لیپ کرتا ہے۔ ایچ/2 ڈی بی ایم ؟؟" ڈیسکرپشن میں شامل کیا جا سکتا ہے جس میں "؟؟" یہ ظاہر کرتا ہے کہ یہ پیٹرن ابھی تک وجود میں نہیں آیا ہے۔ مستقبل کے پیٹرن ایک اور ڈیسکرپشن کو "؟؟" شامل کر کے تبدیل کیا جا سکتا ہے۔ اگر پیٹرن ناکام رہتا ہے تو تاجر وضاحتی خانوں سے اپنا ڈیٹا ہٹا سکتا ہے۔ پس دونوں سمتوں کو زیر غور لایا جاتا ہے اور مزید قابل اعتبار تجزیے کے لیے ان کو مدنظر رکھا جاتا ہے۔ آخری رجحان کی پڑتال کی جا سکتی ہے تاہم تاجر لہروں میں کمی اور اتار چڑھاؤ کے باعث کوئی پیٹرن تلاش نہیں کر سکتا۔ پس مختصر دورانیہ وقت کے لیے اس کی پڑتال کی جا سکتی ہے۔ اب کینڈل سٹک کو چارٹ پر بھی شناخت کیا جا سکتا ہے۔ ایک گہرا بادل یا ڈارک کلاؤڈ اس ریجن پر وجود میں آتا ہے۔ پچھلی کینڈل کے پچھلی سے زیادہ ہائی اور کلوز پرائس کے اوپر اوپن پرائس ایک فروختی آرڈر 1000 پپس سے اوپر رکھوایا جا سکتا ہےجو کہ ڈارک کلاؤڈ کینڈل کی کلاز پرائس سے کم ہوتا ہے۔ اگر تاجر پہلے ہی فروختی آرڈر رکھوا چکا ہو تو ٹی پی پرائس معاونتی لائن اور ایک اہم ریجن کے قریب ہو سکتی ہے۔ تاجر کو حالی کینڈلز کو شناخت کر لینا چاہیے۔ ڈارک کلاؤڈ یہ ظاہر کرتا ہے کہ قیمت 1157 کی طرف گراوٹ کا شکار ہو گی اور ان تاجروں کے لیے بہتر موقع ہوتا ہے جو کہ نیچے جاتے رجحان کا اندازہ لگاتے ہیں۔ اس چارٹ میں تمام اہم پیٹرنز معاونتی مزاحمتی اور دونوں اطراف کی کینڈلز کا مکمل طور پر جائزہ لیا جائے گا۔ اینڈریوز پچ فورک مارکیٹ کے رجحان کا جائزہ لینے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ یہ تین مدار منتخب کیے جا سکتے ہیں۔ ٹریگر لائن کو ٹرینڈ لائن کے ذریعے کھینچا جا سکتا ہے۔ ٹریگر لائن متحرک طور پر معاونتی مزاحمتی ہے۔ یہ لائن اس مقام پر پرائس انکریمنٹ کے خلاف مزاحمت کرتی ہے۔ جب ٹریگر لائن کو پار کیا جا چکا ہو تو یہ اوپر جاتے رجحان کے حوالے سے معاوتنی لائن بن جاتی ہے۔ چونکہ پرائس اس لائن کو دوبار چھو سکتی ہے اس لیے یہ معاوتنی یا مزاحمتی لائن کے طور پر رجحان کو متاثر کر سکتی ہے۔ اینڈریوز پچ فورک پوائنٹس کی درست لوکیشن کے لیے تاجر کو مختصر دورانیہ وقت کا انتخاب کرنا پڑتا ہے۔ ہم پہلے ہی پچھلی نشستوں میں اینڈریوز پچ فورک کو زیر بحث لا چکے ہیں۔ اس بات کی سفارش کی جاتی ہے کہ اس کی بصری خصوصیات کو بدلا جائے تاکہ اس پیٹرن کو صرف ماہانہ یا ہفتہ وار دورانیہ ہائے وقت میں دیکھا جائے۔ اس حوالے سے مزید اینڈریوز پچ فورک پیٹرن ابھی موجود نہیں ہیں۔ فائبونیکی پیٹرن ظاہر کرتا ہے کہ قیمت ابھی تک لیول 38.2٪ سے نیچے ہے پس یہ پوائنٹ مطلوبہ تیسرے مدار کا پوائنٹ ہے۔ انڈیکیٹر چارٹ پر اے او ظاہر کرتا ہے کہ ہڈن ڈائورجنس وجود میں آ چکی ہے۔ سی سی آئی 100- سے قریب ہے جو 100- کا پہلا ٹچ ہے جو کہ اس مقام پر موجود ہے اور اس کے بعد نیچے جاتا رجحان سامنے آتا ہے۔ اوور سولڈ کنڈیشن ابھی تک واقع نہیں ہوا اسی طرح اس ریجن میں بھی نہیں ہوا پس مزید گراوٹ بھی ممکن ہے۔ آر ایس آئی مزید کوئی نمایاں سگنل ظاہر نہیں کرتی ہے۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Breakout Price of Triangle Pattern - Double Top and Bottom

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Bullish and Bearish Candlestick Patterns - Dark Cloud

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Andrew\\'s Pitchfork Pivot, Trigger and Median Lines

اب تاجر ہفتہ وار دورانیہ وقت کے حوالے سے تجزیہ کر سکتا ہے۔ پہلے چارٹ پر تاجر کو تازہ ترین دورانیہ ہائے وقت میں تمام ممکنہ پیٹرنز لیولز کینڈلز معاونتی اور مزاحمتی لائنوں کو مدنظر رکھنا پڑتا ہے۔ پچھلے ٹرینڈز لیول اور معاونتی و مزاحمتی لائنیں جو کہ مارکیٹ پرائس سے قریب ہوتی ہیں ان کو کھینچا جانا چاہیے۔ ایک لیول جو کہ کئی ہٹس کے ساتھ ہوتا ہے اس کی بصری شکل کو تاجر روزانہ اور مختصر نوعیت کے دورانیہ وقت سے بدل سکتا ہے یہاں تک کہ ایچ 1 ہو جائے۔ ان لہروں پر ایک معاونتی لائن ہوتی ہے جسے بنیادی اوپر جاتے رجحان کی نسبت سے معاونتی لائن تصور کیا جا سکتا ہے۔ پس وضاحتی خانے میں "ایس ڈبلیو" کو داخل کیا جا سکتا ہے۔ لیول 1182 کی اس ٹائم فریم میں بھی تصدیق کی جا سکتی ہے۔ ماہانہ دورانیہ وقت میں ٹرائی اینگل پہلے ہی کھینچی جا چکی تھی۔ فائبونیکی پیٹرن کے ذریعے آخری رجحان کا جائزہ لیا جا سکتا ہے۔ ایک انگلفنگ کینڈل سٹک آخری چوٹی پر وجود میں آ چکی ہے اس کی لمبائی 755 پپس ہے۔ تاجر اس کینڈل کے نیچے فروختی آرڈر رکھوا سکتا تھا جس کےساتھ ایس ایل پرائس ہے جو کہ فائبونیکی کے قریب قریب 76.4٪ کے حوالے سے انٹری پرائس کے مقابلے میں 755 پپس کم ہے۔ پرائس یا قیمت پہلے ہی 1269 تک کم ہو چکی ہے۔ پس یہ فرض کیا جاتا ہے کہ قیمت 1231 کی طرف گراوٹ کا شکار ہو گی۔ قیمت 61.8٪ لیول کو چھو نہ پائی تاہم ایک اور تیزی سے نیچے جاتے رجحان کی پیشگوئی کی جا سکتی ہے اور اس کی وجہ لیول 50٪ پر ہونے والا اتار چڑھاؤ ہے۔ تاجر لیول 61.8٪ سے نیچے باکس رکھوا سکتا ہے مع ڈسکرپشن "61.8 ایف ڈبلیو" جو کہ ڈبلیو 1 ڈی 1 اور ایچ 4 دورانیہ ہائے وقت کے حوالے سے دستیاب ہے۔ اس لیول کے باوجود اس بات کا اغلب امکان ہے کہ قیمت 76.4٪ کے لیول تک گرے گی۔ اس لیول کے تحت موجود باکس مع ڈسکرپشن "76.4 ایف ایم + ایچ کینڈل ڈبلیو" ہے جو کہ ڈبلیو 1 ڈی 1 اور ایچ 4 پر فعال ہے۔ اگر قیمت اوپر کی طرف جائے گی تو یہ 1447 تک پہنچے گی جس میں 1447 اور 1431 کے درمیان ایک نمایاں ریجن ہے۔ ایم پر ایک باکس رکھوایا جا سکتا ہے اس لیے اس کی ڈیسکرپشن "ایم ایف ڈبلیو" ہو سکتی ہے جس کا مطلب ہفتہ دار دورانیے میں فائبونیکی فلیگ کا لیول ایم ہے۔ یہ ہفتہ وار روزانہ ایچ 4 اور ایچ 1 دورانیہ ہائے وقت میں نظر آتا ہے۔ یہ تصوراتی مفروضہ نادرست ثابت ہو سکتا ہے پس تاجر اس کے وضاحتی خانے میں سوالیہ نشانات شامل کر سکتا ہے۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Pip and Pippet to Stop Loss and Take Profit Prices

آخری لہر کو مد نظر رکھتے ہوئے تاجر آخری رجحان کے حوالے سے فائبونیکی کو ری لوکیٹ کر سکتا ہے۔ بالکل آخر میں ایک پیننٹ پیٹرن مع پول ہوتا ہے اور اس کے ساتھ ٹرائی اینگل پیٹرن بھی ہوتا ہے۔ اوپر کی ٹرینڈ لائنیں چوٹیوں کو جوڑتی ہیں۔ تاجر کو ٹرینڈ لائن کے ذریعے ویلیوں کو جوڑینا ہوتا ہے تاکہ بریک آؤٹ پوائنٹ کو شناخت کر سکے۔ فائبونیکی پیٹرن کو ری لوکیٹ کیا جا سکتا ہے تاکہ ٹی پی پرائس کی وضاحت کی جا سکے۔ فائبونیکی کا لیول ایچ/2 ہوتا ہے جو باکس پر اوورلیپ کرنے والی پہلی ٹی پی پرائس کا تعین کرتا ہے پس "ایچ/2 پی ڈبلیو" کو اس ڈیسکرپشن میں شامل کیا جا سکتا ہے۔ اس کے بعد ٹی پی پرائس مع ایچ پپس ایک اور باکس کے قریب ہوتا ہے پس "ایچ پی ڈبلیو" وضاحتی خانے میں لکھا جا سکتا ہے۔ تصدیقی سگنلز میں اضافہ ہو رہا ہے پس تاجر کو ڈیسکرپشن باکس میں تمام ڈیٹا کو دیکھ لینا چاہیے۔ اگر تاجر صرف ٹرائی اینگل پیٹرن کو مدنظر رکھتا ہے تو ٹی پی اور ایس ایل قیمتوں کو شناخت کیا جا سکتا ہے۔ مزید ڈیٹا بھی باکسوں کی ڈیسکرپشن میں منسلک کیا جا سکتا ہے جو کہ ٹی پی قیمتوں کو اوورلیپ کرتا ہے۔ پہلے باکس میں ایچ/ 2 ٹی ڈبلیو" اور دوسرے باکس میں "ایچ ٹی ڈبلیو" ۔ مزید تصدیقی سگنلز پر مشتمل باکسوں کی ان کے رنگ بدل کر نشان دہی کی جا سکتی ہے تاکہ ان کی زیادہ اہمیتی درجے کی وضاحت کی جائے۔ اس آخری رجحان کے حوالے سے کوئی اور پیٹرن موجود نہیں۔ اسی طرح اینگلفنگ اور ڈارک کلاؤڈ کینڈلز ہوتی ہیں جو کہ ممکنہ قیمت کو 1233 کی طرف گرتا ہوا دکھاتی ہیں۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Relative Strength Index Levels 70 and 30 - Oversold and Overbought

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Weekly Timeframe, Awesome Oscillators - RSI and CCI

رینج اور کلیم مارکیٹ ظاہر کرتی ہے کہ تاجر کسی بڑی خبر یا وقوعے کے ہونے کے منتظر ہیں۔ ٹرائی اینگل پیٹرن میں ٹی پی پرائس 640 پپس ہو گی جو کہ بریک آؤٹ پوائنٹ سے کم ہو گی۔ دوسرے چارٹ کے حوالے سے ہفتہ وار دورانیہ وقت کے حوالے سے سب سے زیادہ حالیہ رجحانات کے حوالے سے اینڈریوز پچ فورک موجود ہوتا ہے۔ سب سے زیادہ حالیہ ہفتوں میں پرائس زیادہ رفتار سے نقل و حرکت نہیں کرتی ہے۔ لیکن اگر تاجر آخری لہر کو مدنظر رکھے تو وہ جان لے گا کہ قیمت فائبونیکی پیٹرن کے 38.2٪ لیول کی طرف پلٹ آتی ہے۔ پس مزید گراوٹ کا امکان باقی رہتا ہے۔ اس لائن پر ٹریگر لائن کھینچی جا سکتی ہے۔ یہ لائن طاقت ور متحرک معاونتی/مزاحمتی لائن کے طور پر تصور کی جا سکتی ہے۔ تیسرے چارٹ پر جس پر انڈیکیٹرز ہوتے ہیں اس کے متعلق یہ مشاہدہ کیا جا سکتا ہے کہ سی سی آئی لیول 100- کے قریب ہوتا ہے۔ پس اگر یہ لائن چھو جائے تو مارکیٹ پرائس گراوٹ کا شکار ہو جائے گی۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Major Financial Market Annual Reports and News

ٹرینڈ لائن آر ایس آئی میں آخری رجحان کی ویلی کے نیچے رکھوائی جا سکتی ہے۔ آر ایس آئی پر کوئی بریک نہیں ہوتی ہے پس تاجر اس انڈیکیٹر سے کوئی سگنل کشید نہیں کر سکتا ہے۔ اےاو تازہ ترین رجحانات کے حوالے سے کوئی ڈائورجنس یا ہڈن ڈائورجنس ظاہر نہیں کرتا ہے۔ پہلے چارٹ پر روزانہ دوارانیہ وقت ڈیپکٹڈ پیٹرنز یا نمونہ جات اور لائنین یا لکیریں دکھاتا ہے۔ تازہ ترین لہر سے متعلقہ تمام پیٹرنز اور لائنیں دستیاب ہیں۔ اس دورانیہ وقت میں ٹرائی اینگل پیٹرن کا امکان زیادہ ہوتا ہے۔ رینج مارکیٹ ظاہر کرتی ہے کہ تاجر کلیدی خبر کے منتظر ہیں یا کسی مطلوبہ سمت میں آرڈر رکھوانے کے لیے کسی ایونٹ کا انتظار کر رہے ہیں۔ اس رجحان کے حوالے سے بقیہ بچنے والا واحد معاملے کی وضاحت کے لیے فائبونیکی کو کھینچا جاتا ہے۔ پس ایک باکس 61.8٪ پر رکھوا دیا جاتا ہے اور اس کے ساتھ "61.8٪ ایف ڈی" کی ڈیسکرپشن ہوتی ہے۔ رنگ کو نارمل سبز سے بدل دیا جاتا ہے۔ ایک متحرک معاونتی/مزاحمتی لیول اس اہم پرائس پر کھینچ دیا جاتا ہے اور ڈیسکرپشن "ایل ڈی" کو بھی درج کر دیا جاتا ہے۔ اس پرائس کے حوالے سے ایک اور لیول بھی رکھوا دیا جاتا ہے۔ رینج مارکیٹ کے باعث سب سے حالیہ رجحان کے حوالے سے کوئی نمایاں معاونتی اور مزاحمتی لائنیں یا لیول نظر نہیں آتے ہیں۔ رینج مارکیٹ میں کوئی بھی قابل ذکر کینڈل سٹک نہیں ہو گی جیسا کہ اس چارٹ میں پچھلے رجحان میں تھی۔ دوسرے چارٹ کے اینڈریوز پچ فورک کو کافی درستگی سے روزانہ کے دورانیہ وقت کے حساب سے ری لوکیٹ کیا جا سکتا ہے۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action - Flag and Pennant Pattern - Pivot Lines and Levels - Gold Price Chart

جدید ترین رجحان پر بلش اینڈریوز پچ فورک ہوتا ہے۔ اس کی بصری خصوصیات تبدیل کی جا سکتی ہیں، چونکہ پرائس تیسرے مدار کی لائن کو پار کر چکی ہوتی ہے اس لیے صرف فروختی سگنل درست ہو گا۔ ٹریگر لائن کی جان کاری کے لیے ٹرینڈ لائن کو رکھوایا جاتا ہے جس کو قیمت ابھی تک پار نہیں کر پائی ہوتی ہے۔ اگر قیمت ٹریگر لائن کو پار کر لیتی ہے تو تیسرے اور پہلے مداروں کے ٹی پی پوائنٹس کی طرف بڑھے گی۔ تیسرے چارٹ کے حوالے سے روزانہ کے دورانیہ وقت کے حساب سے جدید ترین رجحانات ظاہر کرتے ہیں کہ قیمت بولنجر بینڈ میں ہے اور موونگ ایوریج لائنیں اپنے درست مقامات پر ری لوکیٹ کر رہے ہیں۔ اگر قیمت نچلی طرف سے لائن 50 کو پار کرتی ہے اور لائن 50 لائن 100 سے نیچے چلی جاتی ہے تو ایک بیئرش رجحان نچلی طرف سفر جاری رکھ سکتا ہے۔ سی سی آئی لیول 100- کے قریب ہے اور آر ایس آئی اپنی ٹرینڈ لائن کو توڑنے کے نزدیک ہے۔

پہلے چارٹ پر ایچ 4 دورانیہ وقت ذکر شدہ پیٹرنزاور لائنوں کی نشان دہی کرتا ہے اور اس کی وجہ یہ ہے کہ رینج مارکیٹ 1300 اور 1288 کے درمیان رہ رہی ہوتی ہے۔

Gold Trend Analysis Applying Price Action -Commodity Channel Index Oscillator - Overbought oversold

پس کوئی بھی اہم کینڈل سٹک پیٹرن یا لائنیں موجود نہیں ہیں۔ دوسرے چارٹ پر بھی یہی حالت رہتی ہے۔ صرف بلش اینڈریوز پچ فورک رکھوایا جا سکتا ہے جس میں ابھی تک تیسرا مدار وجود میں نہیں آیا ہوتا ہے۔ ٹریگر لائن یہ ٹرینڈ لائن ہو گا۔ اس کی بصارت ایچ 4 پر سیٹ کی جا سکتی ہے پس قیمت نچلی طرف سے 1283 کو توڑتی ہے اس کے بعد تاجر فروختی آرڈر رکھوا سکتا ہے۔ تیسرے چارٹ پر ایچ 4 دورانیہ وتق کے ساتھ سی سی آئی اور اے او کوئی سگنل ظاہر نہیں کرتے۔

تمام تر تجزیے کے بعد تاجر چارٹوں کو مستقبل میں پھر سے حاصل کرنے کے لیے مخصوص ناموں کے ساتھ محفوظ کر سکتا ہے۔ یہ پروفائل 3 چارٹوں اور ان کی تمام تر خصوصیات پر مشتمل ہوتا ہے۔ پہلے چارٹ کے حوالے سے ماہانہ دورانیہ وقت کے حوالے سے بات کو مجموعی حوالے سے سمجھا جائے تو خریداری انٹری پرائسز 1154 1054 اور 977 کے حوالے سے ہوتی ہیں جب کہ فروختی آرڈر کی انٹری پرائس 155ہو گی۔ ہفتہ وار دورانیہ وقت کے حوالے سے دیگر خریداری اور فروختی آرڈرز کی انٹری پرائس کو شمار کیا جا سکتا ہے۔ تاجر 3 چارٹ استعمال کر کے کسی بھی سمبل کا مکمل طور پر تجزیہ کر سکتا ہے۔ اس بات کی پرزور سفارش کی جاتی ہے کہ تاجر ماہانہ دورانیہ وقت کے حساب سے اپنا تجزیہ شروع کریں اور مختصر دورانیہ ہائے وقت کے حوالے سے کام کریں۔

اس کے ساتھ ہی یہ نشست اختتام کو پہنچی۔ اگلی نشست کے ساتھ پھر حاضر ہوں گے، اپنا خیال رکھیے گا۔

Comments

Copyright © 2011-2020 PFOREX.COM | Professional Forex School | Cashback and Rebates