Financial Markets and Advantages of Forex - PForex Education

3۔ مالیاتی مارکیٹیں اور فاریکس کے فوائد

10 4 Votes
Instructor

3۔ مالیاتی مارکیٹیں اور فاریکس کے فوائد

پیشہ وارانہ فاریکس خدمات مالیاتی تربیت از طرف پی فاریکس

فاریکس تربیتی پروگرام کی تیسری نشست

فاریکس کی پیشہ وارانہ تربیتی مشق بحوالہ مالیاتی مارکیٹ میں خوش آمدید۔ اس نشست میں ہم آپ کو مالیاتی مارکیٹوں اور فاریکس کے فوائد سے متعارف کروائیں گے۔ اس نشست کا پہلا حصہ مالیاتی مارکیٹوں کی تاریخ سے متعلق ہے۔

مالیاتی مارکیٹوں کی تاریخ

یہ مارکیٹیں تبھی سے وجود میں آ گئی تھیں جب دنیا میں پہلی بار تجارت کا عمل شروع ہوا تھا۔ ٹیکنالوجی کے میدان میں برق رفتار پیش رفت اور صنعتوں کے فروغ کے باعث، اقوام عالم کے درمیان درآمد و برآمد کا سلسلہ حیرت انگیز طور پر تیزی اختیار کر گیا ہے۔ اور اس کا نتیجہ یہ نکلا ہے، زرمبادلہ اور مالیاتی مارکیٹوں کے مابین خاص تعلق قائم ہو گیا ہے۔ کمپیوٹر کے عہد کے آغاز اور انٹرنیٹ کی پیدائش نے کاروباری معاہدوں کی تعداد بھی بڑھا دی ہے اور اس عمل کو بھی آسان بنا دیا ہے۔ اس باعث یہ کاروبار پہلے کی نسبت تیزی سے پھیل گیا ہے۔ بنکوں اور دیگر مالیاتی اداروں کی جانب سے اس کاروبار میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری نے خریداروں اور فروخت کنندگان کے مابین قابل اطمینان سطح پر اعتماد کی فضا کو فروغ دیا ہے۔ اس باعث تجارتی عمل مفت اور سہل ہو گیا ہے۔ ان دنوں بیشتر بیوپاری اور تاجر اپنا کاروبار کرنا چاہتے ہیں، بذریعہ مخصوص سافٹ وئیر، یا بنکوں اور مالیاتی اداروں کی قانونی ویب سائٹوں پر۔ مزید یہ کہ، کوئی بھی فریق دوسرے فریق یا متعلقہ پراڈکٹ کو دیکھ نہیں پاتا، یہ بندوبست صرف تبھی ممکن ہو پایا جب بنکوں اور مالیاتی اداروں نے کریڈٹ اور انشورنس کا نظام قائم کیا ہے۔

Financial Markets and Advantages of Forex - Banks and Monetary Institutions

مالیاتی مارکیٹوں کے مختلف شعبہ جات

تمام مالیاتی مارکیٹوں کے مختلف شعبہ جات ہوتے ہیں، جن کو ہم نے پانچ حصوں میں تقسیم کیا ہے۔

سٹاک ایکسیچینج

1۔ پہلے شعبے کو "سٹاک" کہا جاتا ہے۔ مالیاتی اداروں او دیگر کمپنیوں کی معاونت سے، لوگ دنیا بھر میں یہ سٹاک خریدتے اور فروخت کرتے ہیں۔ مثلاً، برطانیہ ممیں، لندن کی سٹاک ایکسچینج نے افراد کو سٹاکس خریدنے اور بیچنے کا موقع فراہم کیا ہے۔

انڈیکس

2۔ دوسرا شعبہ جس میں اکثر لوگ دلچسپی رکھتے ہیں "انڈیکس" کہلاتا ہے۔ اس میں یوں ہوتا ہے کہ کمپنی کا ایک شیئر خریدنے کی بجائے، بہت سے افراد اس شیئر کا انڈیکس خریدنے میں دلچسپی ظاہر کرتے ہیں۔ ان کی تجارت عالمی سطح پر کی جا سکتی ہے۔ امریکا میں، ان کو "ایس & پی 500" یا "سٹینڈرڈ & پورز 500"، کہا جاتا ہے جب کہ جرمنی میں ان کو "ڈی اے ایکس" یا (ڈیوٹشر ایکٹائن انڈیکس) کے نام سے جانا جاتا ہے۔

Different Financial Markets and Advantages of Forex - Stock Exchange - Index - Bond - Commodity

کموڈٹی یا جنس

3۔ مالیاتی مارکیٹوں کا تیسرا شعبہ جس میں تاجر دلچسپی ظاہر کرتے ہیں، جنس یا "کموڈٹی" کہلاتا ہے۔ اس میں یوں ہوتا ہے کہ بہت سے افراد مختلف سامان جیسے سونا، چاندی، تیل، گندم اور دیگر اجناس کو خریدنے یا فروخت کرنے میں دلچسپی ظاہر کرتے ہیں۔

بونڈ

4۔ چوتھے شعبے کو عام طور پر "بانڈز" کے نام سے پکارا جاتا ہے۔ گورنمنٹ کے جاری کردہ بانڈز، اور نجی شعبے کے جاری کردہ شیئر چاہے حتمی شرح متعین ہو یا نہ ہو، خریدنے میں آسان ہیں۔ مثلاً، امریکا میں، شعبہء خزانہ اس طرح کے بانڈز جاری کرتا ہے۔

فاریکس (فارن کرنسی ایکسچینج)

5۔ پانچواں شعبہ فارن کرنسی ایکسچینجج سے متعلقہ ہے۔ یہ مارکیٹ کا سب سے بڑا حصہ ہے۔ اس شعبے میں، اہل فریقین بیرونی کرنسیوں میں خرید و فروخت میں دلچسپی ظاہر کرتے ہیں۔

مثلاً، جب آپ برطانوی پاؤنڈز یا امریکی ڈالر کسی اور کرنسی کے بدل میں لیتے ہیں؛ تو آپ بیرونی کرنسی کی خرید و فروخت کر رہے ہوتے ہیں۔ اس قسم کے معاہدہ جات تمام مالیاتی مارکیٹوں میں تجارتی سرگرمیوں کا بڑا حصہ ہوتے ہیں۔

Financial Markets and Advantages of Forex - Foreign Currency Exchange Market

مالیاتی مارکیٹوں سے متعلق متنوع تجارتی سرگرمیاں

مالیاتی مارکیٹوں میں مختلف النوع تجارتی سرگرمیاں شروع کی جا سکتی ہیں۔ ہم ان میں کچھ کا جائزہ لیں گے۔

فوری سودا بازی

تجارت کی پہلی قسم فوری معاہدہ جات پر مشتمل ہے جن کو فوری سودابازی کہا جا سکتا ہے۔ اس قسم کے معاہدے میں، تجارتی سامان مالک کی صوابدید پر ہوتا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ تجارت کے دوران ان پر کوئی ذمہ نہیں ہوتا کہ اگر وہ معاہدے میں تبدیلی لائیں یا اپنا لائحہء عمل بدل دیں۔ مثلاً، اگر نے گھر یا سونے کا سکہ بیچنا ہو، تو یہ آپ پر منحصر ہے کہ آپ نے کب تک اسے پاس رکھنا ہے، اور آپ اسے فروخت کرنے کے لیے مناسب وقت کا تعین کرنے میں آزاد ہیں۔

مستقبلیاتی سودابازی

دوسری قسم کی تجارت مستقبلیاتی سودابازی کہلائی جا سکتی ہے۔ اس طرح کے معاہدوں میں، دونوں پارٹیوں کے مابین ایک مستقبل کی کوئی تاریخ متعین کی جا سکتی ہے (بطور ایکسپائری تاریخ)۔ اس قسم کی تجارت میں خریدار پر لازم ہوتا ہے کہ وہ ایک مخصوص رقم پہلے سے جمع کروا دے۔ اگر ایکسپائری تاریخ آن پہنچے، تو مالک کو اپنی پراڈکٹ فروخت کرنا ہوتی ہے، الا یہ کہ پہلے ہی فروخت نہ ہو چکی ہو۔

اختیاری سودابازی

تجارت کی تیسری قسم اختیاری سودابازی کہلاتی ہے۔ یہ بھی مستقبلیاتی سودابازی کی طرح ہی ہوتی ہے، تاہم فرق یہ ہے کہ اس میں مستقبل کی طے کردہ تجارتی سودابازی کی تاریخ میں تبدیلی ممکن ہے۔ تاہم، یہ تبھی ہو پائے گا جب فریقین تاریخ میں تبدیلی پر باہم متفق ہوں۔ اس زائد لچک والی سودابازی کا نتیجہ مہنگے سودوں کی شکل میں برآمد ہوتا ہے۔

Financial Markets and Advantages of Forex - Liquidity and Leverage - Future Option and Forward Trade

پیشگی سودابازی

تجارت کی چوتھی قسم شخصی معاہدے پر مشتمل ہوتی ہے اور یہ پیشگی تجارت کہلاتی ہے۔ اس قسم کی سودابازیوں میں خریدار کو پوری رقم پہلے سے ادا کرنا پڑتی ہے اور مقررہ تاریخ پر سامان کی وصولگی عمل میں آ جاتی ہے۔

دیگر مارکیٹوں کے مقابلے میں فاریکس کے استعمال کے فوائد

اس نشست میں ہم جس اگلی بات کا تذکرہ کریں گے وہ ہے فاریکس تجارتی مارکیٹ کے استعمال کے فوائد۔

1۔ پہلا فائدہ تو یہ ہے کہ فاریکس کاروبار 24 گھنٹے نافذ العمل رہتا ہے۔ چونکہ فاریکس کا تعلق عالمی مارکیٹ کے ساتھ ہے، اس لیے تجارتی عمل اس وقت تک جاری رہتا ہے جب تک دنیا بھر میں کہیں بھی کوئی مارکیٹ کھلی ہو۔ یہ بنکوں کے درمیان قائم شدہ نیٹ ورک ہے، جو دن رات کام کرتا ہے، جس کا مطلب ہے کوئی فریق کس وقت بھی سودابازی کا عمل کر سکتی ہے۔

2۔دوسرا فائدہ یہ ہے کہ فاریکس مارکیٹ سرمائے کے بہاؤ کے حوالے سے اعلٰی درجہ رکھتی ہے۔ اس مارکیٹ میں ہمہ وقت خریدار اور فروخت کنندگان موجود ہوتے ہیں جو کسی بھی وقت کسی بھی مالیت کی تجارت کر سکتے ہیں۔ فاریکس میں سودابازی دو طرح سے ہوتی ہے: تاجر کسی بھی کرنسی کی قدر بڑھنے سے قبل اسے خرید سکتے ہیں، یوں انہیں منافع حاصل ہوتا ہے؛ یا اس کی قدر گرنے سے پہلے اسے بیج سکتے ہیں، اس طرح بھی انہیں منافع ملتا ہے۔ یہ وہ فائدہ ہے جو دوسری مارکیٹیں فراہم نہیں کر سکتیں؛ اس لیے، اس مارکیٹ میں منافع کمانے کے بہت سے مواقع موجود ہیں۔

3۔ تیسرا فائدہ یہ ہے کہ فاریکس آپ کو ہمیشہ لیوریج استعمال کرنے کی اجازت دیتی ہے۔ لیوریج کا مطلب یہ ہے کہ تاجر اس خاص وقت میں مارکیٹ میں داخل ہوتے ہیں جب وہ یہ سمجھتے ہیں کہ تب انہیں زیاد منافع ملے گا، حتٰی کہ اگر یہ حیثیت زیادہ رقم کی موجودگی کا تقاضا کرے جو کہ ان کے تجارتی اکاؤنٹ کے سرمائے سے متجاوز ہو۔ دوسری طرف اس کا نقصان یہ ہے کہ، پیشگوئی سے ہٹ کر ہونے والی کم تبدیلی کی صورت میں بھی تاجر کو بھاری خسارے کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

Financial Markets and Advantages of Forex - High Liquidity and Various Leverage plus all Day Trading

بالآخر، ٹیکنالوجی میں ہونے والی حالیہ پیش رفت کے باعث، کوئی بھی فریق انٹرنیٹ حتیٰ کہ اپنے سمارٹ فون کے ذریعے اپنی تجارتی سرگرمیوں پر نظر رکھ سکتا ہے۔ اس سے ایک بار پھر ظاہر ہوتا ہے کہ یہ ہمیشہ فروغ پانے والی مارکیٹ ہے۔

یوں یہ نشست اختتام کو پہنچتی ہے۔ اگی نشست میں پھر ملیں گے۔ اپنا خیال رکھیے گا۔

Comments

Copyright © 2011-2020 PFOREX.COM | Professional Forex School | Cashback and Rebates