Divergence and Convergence -Bullish and Bearish Reversal Analysis

42۔ ڈائورجنس اور کنورجنس

0 0 Vote
Instructor

42۔ ڈائورجنس اور کنورجنس

فاریکس تربیتی پروگرام کی بیالیسویں نشست

فاریکس تربیتی نشست بحوالہ مالیاتی مارکیٹس میں پھر سے خوش آمدید۔ اس نشست میں ہم ڈائورجنس اور کنورجنس کا تفصیلی مطالعہ کریں گے۔

ڈائورجنس اور کنورجنس

جب ٹرانزیکشن حجم مزید پیش رفت کے باوجود دی گئی رجحان کی سمت کو سپورٹ نہیں کرتا تو ڈائورجنس یا کنورجنس کا عمل واقع ہو گا۔ مثال کے طور پر اوپر کی سمت مزید پیش رفت کے باعث قیمت ایک مخصوص درجے تک بڑھ جائے گی تاہم اکثر تاجروں کا یہ رجحان نہیں ہوتا کہ وہ مزید خریداری آرڈر رکھوائیں اور ان میں سے بعض اپنے آرڈر بند کراتے ہیں۔ کنورجنس اور ڈائورجنس کی صورت میں رجحان اپنی موجودہ سمت کو جاری رکھتا ہے اور تاجر محدود مقدار میں آرڈرز رکھواتے ہیں۔

ڈائورجنس

ڈائورجنس کی حالت میں مارکیٹ پرائس اپنی آگے جاتی سمت میں سفر جاری رکھتی ہے اور اوپر جاتی سمت میں چوٹیاں پچھلی چوٹیوں کی نسبت زیادہ بلند ہوتی ہیں تاہم اوسیلیٹر رجحان آہستہ روی کا شکار ہے اور نئی لہریں اور چوٹیاں پچھلی لہروں سے نیچے ہوتی ہیں۔ یہ ظاہر کرتا ہے کہ تاجر مزید چڑھاؤ کی حمایت نہیں کرتے اس کے باوجود مارکیٹ پرائس بڑھتی ہے۔ ڈائورجنس کسی فروختی آرڈر کی نشان دہی نہیں کرتی تاہم یہ تاجروں کو خریداری آرڈر رکھوانے کی حوصلہ شکنی کرتی ہے۔ یہ سفارش کی جاتی ہے کہ تاجر اپنے خریداری آرڈرز کو بند کریں۔

Divergence and Convergence - Levels, Support and Resistance Lines and Trends - Buy and Sell signals

کنورجنس یا منفی ڈائورجنس

کنورجنس کی حالت میں مارکیٹ پرائس اپنی نچیے جاتی سمت کو برقرار رکھتی ہے اور نئی ویلیز پچھلی ویلیز سے نیچے ہوتی ہے اور ان کا رجحان نیچے کی سمت ہوتا ہے۔ تاہم اوسیلیٹر رجحان بڑھ رہا ہے اور نئی لہریں اور ویلیز پچھلی ویلیز کی نسبت زیادہ بلند ہیں۔ یہ ظاہر کرتا ہے کہ تاجر مزید گراوٹ کی حمایت نہیں کرتے حتی کہ مارکیٹ پرائس گھٹ رہی ہو۔ کنورجنس کسی خریداری آرڈر کی نشان دہی نہیں کرتا تاہم یہ فروختی آرڈر رکھوانے کے حوالے سے تاجروں کی حوصلہ شکنی کرتا ہے۔ یہ سفارش کی جاتی ہے کہ تاجر اپنے فروختی آرڈرز بند کر دیں۔

Divergence and Convergence - Close Buy Orders, On Peaks, Indicator - Moving Average MACD Bars

ڈائورجنس چوٹیوں پر وجود میں آتے ہیں جب کہ کنورجنس ویلیز کی نسبت سے وجود میں آتے ہیں۔ آر ایس آئی ایم اے سی ڈی اور اے او موثر ترین اور مقبول اوسیلیٹرز ہیں جو کہ واضح طور پر کنورجنس اور ڈائورجنس کو شناخت کر سکتے ہیں۔ تاجروں کو یہ بات مدنظر رکھنی چاہیے کہ اکثر اوقات کنورجنس اور ڈائورجنس درست نہیں ہوا کرتے۔ اور وہ اس باعث رجحان کی درست سمت نہیں دکھا سکتے کہ مارکیٹ رجحان کے حوالے سے ان کی سمت الٹ ہوا کرتی ہے۔

ایم ٹی 4 پلیٹ فارم کے حوالے سے چارٹ میں ایم اے سی ڈی کو داخل کیا جاتا ہے۔ بلند چوٹیوں کے ساتھ اوپر جاتے مارکیٹ ٹرینڈ کے تناظر میں ایم اے سی ڈی نیچے جاتا مارکیٹی رجحان دکھاتا ہے جس میں نئی چوٹیاں پچھلی چوٹیوں کی نسبت کم بلند ہوتی ہیں۔ یہ کیفیت ظاہر کرتی ہے کہ تاجر مارکیٹ پرائس میں مزید اضافے کی حمایت نہیں کرتے۔ پہلی دو چوٹیوں کی مزید پڑتال ظاہر کریی ہے کہ رجحان کی سمت اوپر جانے کا عمل برقرار رہتا ہے چاہے ایم اے سی ڈی اس ریجن کے حوالے سے طاقت ڈائورجنس ہی کیوں نہ ظاہر کرے۔ اسی طرح ایک اور مثال بھی ہے کہ جس میں مارکیٹ پرائس اوپر جاتا رجحان دکھاتی ہے اور ایم اے سی ڈی رجحان نیچے آتا ہے۔ اس مثال میں تاجر کو کوئی بھی خریداری آرڈر نہیں رکھوانا چاہیے جب کہ مارکیٹ کا رجحان نیچے کی طرف ہو۔ مارکیٹ کے نیچے جاتے رجحان کے پیش نظر کنورجنس کی ایک مثال یہ دکھاتی ہے کہ فروختی آرڈر اس ریجن کے حوالے سے مناسب تجارتی سودے بازی نہیں تھی۔ مارکیٹ پرائس میں کمی پائی گئی جب کہ ایم اے سی ڈی کا رجحان اوپر کی سمت میں تھا۔

Divergence and Convergence - Awesome and Relative Strength Index Levels - Peaks and Valleys on Market Price

تاجر آر ایس آئی استعمال کر سکتے ہیں تاکہ مارکیٹ رجحان میں بھی ڈائورجنس اور کنورجنس کو شناخت کیا جائے۔ نیچے جاتے مارکیٹی رجحان میں آر ایس آئی اوپر کی سمت ہوتا ہے۔ کنورجنس کو ٹرینڈ لائن کے ذریعے دونوں رجحانات سے متعلقہ ویلیز کو جوڑ کر شناخت کیا جا سکتا ہے۔ ایک او دورانیہ وقت کے حوالے سے کنورجنس وجود میں آتی ہے۔ نیچے جاتے مارکیٹی رجحان کے باوجود آر ایس آئی ٹرینڈ بڑھا جس کے باعث یہ فروختی آرڈر رکھوانے کے حوالےسے ناسازگار مقام تھا۔ اگلی لہروں پر بھی ڈائورجنس کا وجود دیکھا گیا۔ جہاں مارکیٹ ٹرینڈ اوپر کی سمت میں تھا جب کہ آر ایس آئی کی سمت نیچے کی جانب دیکھی گئی۔ پس ایم اے سی ڈی کنورجنس اور ڈائورجنس کی شناخت کے حوالے سے آر ایس آئی کے مقابلے میں زیادہ قابل اطمینان ہے۔

Divergence and Convergence - Bullish and Bearish Reveasl Trading Signals, AO and RSI Indicator

تاجر کو بعض ریمارکس کو مدنظر رکھنا چاہیے اگر وہ ڈائورجنس اور کنورجنس استعمال کرتے ہوئے آرڈر رکھوانے کا آرزو مند ہو؛

- بعض ریورسل پیٹرنز یا نمونہ جات جیسا کہ ہینڈ اینڈ شولڈرڈبل ٹاپ اینڈ باٹم ٹرپل ٹاپ اینڈ باٹم یا ویج کنورجنس اور ڈائورجنس کی تصدیق کر سکتے ہیں تاکہ کامیاب آرڈر رکھوایا جا سکے۔

- اووربوٹ اور اوورسولڈ ترجیحی آرڈر کی تصدیق کر سکتے ہیں جو کہ کنورجنس اور ڈائورجنس سے نکلے ہوں۔

- ڈائورجنس اور کنورجنس تصدیق کرتے ہیں کہ تاجر کو وہ آرڈر بند کرنا ہوتا ہے جس کی سمت مارکیٹ ٹرینڈ کے ساتھ متفقہ ہو۔

- اگر کسی لانگ ٹرینڈ کے حوالے سے مختصر ریورسل سوئنگ موجود ہو۔ کنورجنس اور ڈائورجنس کو استعمال کیا جا سکتا ہے تاکہ متفقہ سمت کے ساتھ آرڈرز رکھوانے کے لیے پوائنٹس کوشناخت کیا جا سکے۔

- ریورسل کینڈلز کنورجنس اور ڈائورجنس سگنلز کی تصدیق کر سکتی ہیں۔

Divergence and Convergence - Triple and Double Top and Bottom - Fibonacci and Wedge Confirmations

- فائبونیکی پیٹرنز یا نمونہ جات کو استعمال کیا جا سکتا ہے تاکہ کنورجنس اور ڈائورجنس سگنلز کی تصدیق کی جا سکے۔

- معاونتی اور مزاحمتی لائنوں کو استعمال کیا جا سکتا ہے تاکہ کنورجنس اور ڈائورجنس سگنلز کے حوالے سے تصدیق حاصل کی جا سکے۔

اس کے ساتھ ہی یہ نشست اختتام کو پہنچی۔ اگلی نشست کے ساتھ پھر حاضر ہوں گے، اپنا خیال رکھیے گا۔

Comments

Copyright © 2011-2020 PFOREX.COM | Professional Forex School | Cashback and Rebates