Bullish and Bearish Hidden Divergence- Financial Trading Signals 

43۔ بلش اور بیئرش ہڈن ڈائورجنس

0 0 Vote
Instructor

43۔ بلش اور بیئرش ہڈن ڈائورجنس

فاریکس تربیتی پروگرام کی تینتالیسویں نشست

فاریکس تربیتی نشست بحوالہ مالیاتی مارکیٹس میں پھر سے خوش آمدید۔ اس نشست میں ہم چھپے ہوئے یا ہڈن ڈائورجنس اور بیئرش ٹرینڈز یا رجحانات کا مطالعہ بھی کریں گے۔

ہڈن ڈائورجنس

زیادہ نمایاں معاملات میں سے ایک یہ بھی ہے کہ جسے تاجر ہڈن ڈائورجنس کے حوالے سے قابل ذکر نہیں گردانتے۔ ہڈن ڈائورجنس مارکیٹ کے رجحان سے متفق ہو کر وجود میں آتا ہے پس یہ ایک مناسب قیمت کی نشان دہی کرتا ہے تاکہ آرڈر رکھوایا جا سکے۔

ڈائورجنس اور کنورجنس سے ہٹ کر اس بات کی سفارش کی جاتی ہے کہ تاجر ہڈن ڈائورجنس کی بنیاد پر آرڈر رکھوائے۔ کئی مشقوں کے بعد بھی یہ مشکل ہوتا ہے کہ چارٹ میں ہڈن ڈائورجنس کو شناخت کر لیا جائے اس لیے بہت سے تاجر اس سے مستفید نہیں ہو پاتے ہیں۔

Bullish and Bearish Hidden Divergence - Continuation Trading Signals on Agreeing Direction

بلش ٹرینڈ یا رجحان میں ہڈن ڈائورجنس: اگر کسی مارکیٹ ٹرینڈ کے حوالے سے موجودہ ویلی پچھلی ویلی سے بلند تر ہو اور کسی اوسیلیٹر میں موجودہ ویلی کسی پچھلی ویلی کی نسبت کم تر ہو تو یہ سمجھ لینا چاہیے کہ بلش ٹرینڈ یا رجحان پرہڈن ڈائورجنس نمودار ہو گئی ہے۔

بیئرش ٹرینڈ یا رجحان میں ہڈن ڈائورجنس: اگر مارکیٹ ٹرینڈ کے حوالے سے کوئی موجودہ چوٹی پچھلی چوٹی سے کم بلند ہو اور کسی اوسیلیٹر میں موجودہ چوٹی پچھلی چوٹی کی نسبت بلند تر ہو تو یہ سمجھ لینا چاہیے کہ بیئرش ٹرینڈ یا رجحان پرہڈن ڈائورنس نمودار ہو گئی ہے۔

ایم اے سی ڈی، آر ایس آئی اور اے او وہ بہترین اوسیلیٹرز ہیں کہ جن سے مارکیٹ ٹرینڈ کے حوالے سے ہڈن ڈائورجنس کی شناخت ہو سکتی ہے۔

تاجر کسٹمائزڈ اے او کو ڈاؤنلوڈ کرنے کے لیے ویب سائیٹ PForex.com کا وزٹ کر سکتے ہیں جہاں بہتر استعمال کے لیے اس کی کارکردگی بڑھا دی گئی ہے۔

Bullish and Bearish Hidden Divergence -  Sell Orders, On Peaks, AO Indicator - Uptrend and Downtrend

تاجر انڈیکیٹر مینو میں جا کر بل ولیمز آپشن کے ذریعے اے او یعنی آہسم اوسیلیٹر کو داخل کر سکتے ہیں۔ تاجر اے او پراپرٹیز ونڈو میں جا کر لیول 0 کو داخل کر سکتے ہیں۔ مثلاً اے او چارٹ پر لیول 0 کے اوپر کچھ چوٹیاں ہیں اور ان کے ساتھ مساوی مارکیٹ ٹرینڈ چوٹی بھی موجود ہے۔ اگر مارکیٹ چارٹ پر موجود ٹرینڈ لائن پر باہم جڑی ہوئی چوٹیوں میں نیچے جاتا سلوپ ہو جب کہ اے او چارٹ پر لائن پر اوپر جاتی سمت ہو تو جان لینا چاہیے کہ اس ریجن پر ہڈن ڈائورجنس نمودار ہو گئی ہے۔ جو اس بات کی نشان دہی کرتی ہے کہ ہر نیچے جاتے مارکیٹ رجحان کے حوالے سے ہر چوٹی میں اس حد تک ممکنہ صلاحیت پیدا ہو چکی ہے کہ رجحان مزید نیچے کی طرف جا سکتا ہے۔ بلش ٹرینڈ کے حوالے سے ہڈن ڈائورجنس کی ایک اور مثال یہ ہے مارکیٹ کی ویلیز اور اے او رجحانات ٹرینڈ لائن سے جڑے ہوئے ہیں۔ مارکیٹ میں ٹرینڈ لائن کی ایک اوپر جاتی سمت ہے جب کہ اے چارٹ پر موجود چارٹ لائن کی سلوپ نیچے کی طرف ہے۔ اس ہڈن ڈائورجنس نے اپنے وجود میں آنے کے بعد مزید اوپر جاتے رجحان کی تصدیق کی۔ اس اوپر جاتے رجحان میں کچھ مختصر گھٹاؤ کے بعد ایک طاقت ور ممکنہ صلاحیت لیے اوپر جاتا رجحان وجود میں آیا۔ اس مثال سے پہلے ایک اور ہڈن ڈائورجنس بھی وجود میں آیا۔ اس حقیقت کے باوجود کہ یہ مشکل ہے کہ ہڈن ڈائورجنس کو شناخت کیا جائے یہ بات بھی سامنے کی ہے کہ کامیاب آرڈر رکھوانے کے لیے یہ ایک بہترین موقع ہے۔ یہ مثالیں ہاتھ سے کھینچی گئیں تاہم کسٹمائزڈ اے او جو کہ PForex.com پر دستیاب ہے اس پر تمام ہڈن ڈائورجنس خود کار طریقے سے کھینچے گئے ہیں۔ تاجر وقت کے دورانیوں کو بدل سکتا ہے تاکہ مارکیٹ کے حوالے سے مزید ہڈن ڈائورجنس کی شناخت کر سکے مثلاً آرڈر رکھوانے کے لیے ایک بہترین مقام دستیاب تھا جس کی شناخت تاجر کے لیے مشکل تھی۔ وائیڈ رینج کے حوالے سے ایک اور مثال میں ہڈن ڈائورجنس نمودار ہوئی تاہم اس کی شناخت ہونا مشکل ہو سکتی تھی اگر کسٹمائزڈ اے او کا استعمال نہ کیا جاتا۔ گولڈ چارٹ پر 2001 تا 2004 ایک ہڈن ڈائورجنس وجود میں آئی جسے کسٹمائزڈ اے کے ذریعے از خود کھینچا گیا۔ مزید مثالوں کا مطالعہ کیا جا سکتا ہے تاکہ مارکیٹ کے حوالے سے ہڈن ڈائورجنس کی شناخت کی اہلیت کو بہتر بنایا جا سکے۔

Bullish and Bearish Hidden Divergence - Support and Resistance Levels - Forex Market Analysis

تاجر ہڈن ڈائورجنس اور دیگر پیٹرنز یا نمونہ جات اور کیفیات کو باہم ملا سکتے ہیں تاکہ مناسب پوائنٹس کی شناخت کی جا سکے۔ اس حوالے سے تاجروں کے لیے بعض مفید ریمارکس موجود ہیں:

- بعض ریورسل پیٹرنز یا نمونہ جات جیسا کہ ہیڈ اینڈ شولڈ ڈبل ٹاپ اور باٹم ٹرپل ٹاپ اور باٹم یا ویج جو کہ ہڈن ڈائورجنس کی تصدیق کر سکتے ہیں تاکہ کامیاب آرڈر رکھوایا جا سکے۔

- اوور بوٹ اور اوور سولڈ ہڈن ڈائورجنس سے نکلے ہوئے ترجیحی آرڈر کی تصدیق کر سکتے ہیں۔

- ہڈن ڈائورجنس تصدیق کرتی ہے کہ تاجر کو ایسا آرڈر رکھوانا چاہیے جو کہ مارکیٹ کے رجحان کے ساتھ متفقہ سمت میں ہو۔

Bullish and Bearish Hidden Divergence - Double Top Bottom - Fibonacci, Head and Shoulder

- اگر کسی لانگ ٹرینڈ یا طویل المدت رجحان میں مختصر پلٹاؤ یا ریورسل سوئنگ ہو تو ہڈن ڈائورجنس سے استفادہ کیا جا سکتا ہے تاکہ لانگ ٹرینڈ کے ساتھ متفقہ سمت میں آرڈر رکھوانے کے لیے پوائنٹس کی شناخت کی جا سکے۔

- مسلسل یا کنٹینیول کینڈلز ہڈن ڈائورجنس سگنز کی تصدیق کر سکتے ہیں۔

- ہڈن ڈائورجنس سگنلز کے حوالے سے تصدیق کے لیے فائبونیکی پیٹرنز کو استعمال میں لایا جا سکتا ہے۔

- ہڈن ڈائورجنس سگنلز کے حوالے سے تصدیق حاصل کرنے کے لیے معاونتی اور مزاحمتی لائنوں کو استعمال میں لایا جا سکتا ہے۔

اس کے ساتھ ہی یہ نشست اختتام کو پہنچی۔ اگلی نشست کے ساتھ پھر حاضر ہوں گے، اپنا خیال رکھیے گا۔

Comments

Copyright © 2011-2020 PFOREX.COM | Professional Forex School | Cashback and Rebates